Accessibility

Accessibility

Website Zoom

Color/Contrast

Download Reader

The Sitting of the National Assembly has been adjourned to meet again on Friday, the 9th June, 2023 at 4.00 p.m. |The Majlis-e-Shoora (Parliament) has been adjourned to meet again on Monday the 10th July, 2023, at 5.pm, in the Parliament House, Islamabad. Committee Meetings:03:00 PM: 37th meeting of SC on Foreign Affairs at Constitution Room, Parliament House, Islamabad | 04:00 PM: 51st to 68th meetings of Special Committee on Affected Employees at Old PIPS Hall, Parliament Lodges, Islamabad |
Print Print

قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے متاثرہ ملازمین کی انتیسویں میٹنگ پروفیسر ڈاکٹر قادر خان مندوخیل کی زیر صدارت میں منعقدہوا

Monday, 20th March, 2023
اسلام آباد۔20 مارچ 2023()قومی اسمبلی کی خصوصی کمیٹی برائے متاثرہ ملازمین کی انتیسویں میٹنگ پروفیسر ڈاکٹر قادر خان مندوخیل کی زیر صدارت میں منعقدہوا.
 
ایف آئی کی افسران نے کمیٹی کو بتایا کہ پبلک اکاؤنٹ کمیٹی کی طرف سے جو احکامات ہیں ان پر عملدرآمد کا حکم ہے جبکہ ایف آئی اے نے متاثرہ ملازمین کمیٹی کے احکامات پر عمل کرتے ہوئے ،ملازمین کے اکاؤنٹ کھول دیئے ہیں،شناختی کارڈ بحال ہو گئے ہیں اورکسی ملازم کی گرفتاری کیلئے چھاپے نہیں مارے جا رہے،ایف آئی آر پبلک اکاؤنٹ کمیٹی کے احکامات پر درج کروائی گئی ہیں،چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ ہم نے ان تمام کیسز کو بڑی باریکی سے چھان بین کی ہے،اس لئے ہم بھی بات کریں گے اور آپ بھی پبلک اکاؤنٹ کمیٹی کو بتائیں کہ دونوں کمیٹیاں مل کر حل نکالیں۔
آڈیٹر جنرل آف پاکستان(اے جی پی آر) حنان میمن وغیرہ 12 ملازمین کے کیس یر افسران نے بتایا کہ یہ ملازمین 2011 میں بھرتی ہوئے،خودشید شاہ صاحب کی کمیٹی نے ریگولر کرنے کے بھی احکامات دیئے،لیکن یہ ڈریپ کے ملازمین تھے جو دفتر بھی ختم ہو چکا ہے،ملازمین نے بتایا کے ہم کورٹ میں بھی گئے ہیں جو کیس ابھی تک چل رہا ہے،افسران نے کمیٹی کو بتایا کہ کمیٹی کے حکم پر ہم نے 18 ملازمین کو ریگولر کر دیا ہے،کمیٹی نے حکم دیا کہ خورشید شاہ صاحب کی کمیٹی نے جن 4 ملازمین کو ریگولر کرنے کا حکم دیا تھا ان 4 ملازمین کو بحال کیا جائے اور ایک ہفتہ کے اندر رپورٹ دی جائے.
 
پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ 
وزارت پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ کے افسران نے کمیٹی کو بتایا کہ کمیٹی کے احکامات پر عمل کرتے ہوئے ہم نے مختلف برانچوں کے 95 ملازمین کو بحال کر دیا ہے،اور ڈیرہ پراجیکٹ کے 316 ملازمین کے کیسز پر بھی قواعدوضوابط کے تحت کام شروع کیا ہوا ہے،جو کہ جلد مکمل کر کے عملدرآمد ہو جائے گا،کمیٹی نے حکم دیا کہ 10 دن کے اندر طاہر محمود کی بیوہ سمیت دیگر 5 ملازمین کے بارے احکامات پر عملدرآمد کر کے رپورٹ دی جائے۔پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے ملازم ناصر ریاض کی درخواست پر جواب طلب،ملازم بابر علی سمیت دیگر 15 ملازمین کے بارے میں افسران نے کمیٹی کو یقین دلایا کہ ان تمام ملازمین کو کل ہی بحال کیا جائے گا.
 
پی آئی اے،سول ایوی ایشن اور ریلوے کے افسران کی مسلسل عدم حاضری اور احکامات پر عمل نہ کرنے کی وجہ سے کمیٹی نے حکم دیا کہ ریلوے،پی آئی اے اور سول ایوی ایشن کے ہیڈ اور ڈائریکٹر ایچ آر کے خلاف ایف آئی اے فوری طور یر انکوائری شروع کرے اور اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کو حکم دیا کہ ہیڈ آف پی آئی اے،ہیڈ آف ریلوے،ہیڈ آف سول ایوی ایشن اور ہیڈ آف ایچ آر کی ملازمت سے برطرفی کا حکم اور 22 مارچ کو رپورٹ طلب.
 
وزارتِ سمندری امور 
سیکرٹری وزارت سمندری امور کو عدم حاضری پر شوکاز نوٹس
کے پی ٹی سیکرٹری اور پورٹ قاسم کو شوکاز نوٹس،اور مسلسل عدم حاضری کی وجہ سے سمن جاری اور آئی جی اسلام آباد اور آئی جی سندھ کو سمن پر تعمیل کروانے کا حکم.
 
میٹنگ میں قومی اسمبلی ایم این اے عالیہ کامران،آسیہ عظیم،صلاح الدین ایوبی اور اسامہ قادری نے شرکت کی۔