Last Updated On: 10th July 2020, 11:54 AM
Home | Feedback | Advertisments | Careers | Downloads | Useful Links | FAQs | Contact Us 
The Sitting of the National Assembly has been adjourned to meet again on Monday, the 13th July, 2020 at 4:00 p.m.|

Press Release Details

Share Print
Press release
Monday, 29th June, 2020

اسلام آباد؛29جون 2020: اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے کہا ہے کہ پارلیمان کی مضبوطی ہی جمہوریت کی حقیقی روح ہے۔انہوں نے کہا کہ پارلیمان عوام کی امنگوں کی ترجمان ہوتی ہےاورقانون سازی ،عوام کی فلاح کے لیے بنائی گئی پالیسیوں کے لیے فنڈز کا مختص کرنا اور حکومتی نمائندوں کی  جوابدہی پارلیمان کی اولین ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو درپیش تمام مسائل کا حل  پارلیمانی نظام کی مضبوطی میں ہی مضمرہے۔ انہوں نے ان  خیالات کا اظہار عالمی  یوم پارلیمان کے موقع پر اپنے پیغام میں کیا ہر سال 30 جون کو منایا جاتا ہے۔

سپیکر نے کہا کہ موجودہ حکومت پارلیمان کی مضبوطی پر یقین رکھتی ہے اور پارلیمان کو ایک فعال ادارہ بنانے میں بھرپور کردار ادا کر رہی ہے۔ انہوں نے پارلیمان کی مضبوطی اور اسے مزید فعال اور محرک بنانے کے لیے  حکومت اور اپوزیشن کو مل کر کام کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی عالمی وباء کی وجہ سے پارلیمان کا کردار پہلے سے زیادہ اہمیت کا حامل ہو چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وباء پر قابو پانے کے لیے قانون سازی کے ساتھ ساتھ عوامی نمائندوں کو عوام میں اس وباء کے متعلق شعور وآگاہی پیدا کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نےکہا کہ  کورونا وائرس کی وباء پر قابو پانے کے لیے ڈبلیو ایچ او اور وزارت صحت کی طرف سے  جاری کردہ احتیاطی تدابیر اور ایس او پیز پر عملدآمد کو یقینی بنانے میں عوامی نمائندے اہم کردار ادا کر سکتے ہیں ۔ انہوں نے عوامی نمائندوں کو اپنے حلقوں میں عوام کو ایس او پیز اور احتیاطی تدابیر پر عملدآمد کرانے کے لیےاپنا کلیدی  کردار ادا کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

سپیکر نے کہا کہ پارلیمان میں حزب اختلاف کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہےاور اختلافات رائے جمہوریت کا حسن ہے تاہم حزب اختلاف کی طرف سے حکومتی پالیسیوں پر کی جانے والی تنقید صرف تنقید برائے تنقید نہیں ہونی چائیے بلکہ اسے اصلاحی اور تعمیر ی ہونی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ایوان کی کاروائی کے دوران ماحول کو سازگار بنانا حکومت اور اپوزیشن کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ  ملک کی ترقی اور درپیش چیلنجزوں پر قابوں پانے کے لیے قانون سازی ضروری ہےجس کے لیے حکومت اور اپوزیشن کے مابین خوشگوار تعلقات  کا ہونا ضروری ہے۔