Last Updated On: 6th August 2020, 08:24 PM
Home | Advertisments | Careers | Downloads | Useful Links | FAQs | Contact Us 
The Sitting of the National Assembly has been adjourned to meet again on Friday, the 7th August, 2020, at 11:00 am. | Today In National Assembly: 05:00 PM: Majlis-e-Shoora (Parliament) Session | Committee Meetings:02:30 PM: Privatization (Revised) at Committee Room No.7, 4th floor Parliament House Islamabad | 03:00 PM: 8th meeting of the SC on Narcotics Control at Constitution Room (Old Committee Room N0.5 Parliament House |

Press Release Details

Share Print
Ambassador of Yemen Called on Deputy Speaker National Assembly
Wednesday, 11th March, 2020

 

مشترکہ کو ششیں اور باہمی فیصلہ سازی مسلم اُمہ کو درپیش مسائل کے حل  کے لیے ناگزیر ہے :ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی

اسلام آباد11مارچ2020: ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری نے کہا ہے کہ پاکستان اور یمن مذ ہب اور ثقافت کے انمول رشتے میں بندھے ہو ئے ہیں لہذا ایسے اقدامات اٹھائے جائیں کہ دونو ں برادر اسلامی ممالک کے درمیان تعلقات مزید مستحکم ہوں ۔انہوں نے یمن میں امن کے قیام کے لیے پاکستان کی جانب سے  عالمی فورمز خصوصاََ او آئی سی  کے پلٹ فارم پر سفارتی حمایت کے عزم اظہار کیا ۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار یمن کےسفیر محمد موتہار الاشبی  سے ملا قات میں کیا جنہو ں نے بدھ کے روز پارلیمنٹ ہاوس میں اُن سے ملاقات کی۔

                ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی نے کہا کہ پاکستا ن نے ہمیشہ یمن کے اتحاد، َخودمختاری اور علاقائی سا لمیت کی حمایت کی ہے اوریہ سلسلہ یمن میں مکمل امن و استحکام کی بحالی تک جاری رکھے گا۔انہو ں نے کہا کہ دہشت گردی کی لعنت خطے کے لیے مشترکہ خطرہ ہے اور اس خطرے پر تمام ممالک کی طرف سے مر بوط کو ششو ں کے ذریعے ہی قابو پا یا جا سکتا ہے ۔انہوں نے کشمیر میں 7ماہ سے جاری کرفیو  کے وجہ سے  انسانی المیے جنم لے چکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ  بین الاقوامی برادری کی کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی باعث تشویش ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر اقوام متحدہ میں یمنی حمایت پر شکر گزار ہیں ۔

               یمن کے سفیر محمد موتہار الاشبی نے کہا کہ یمن پاکستان کو اپنا قریبی دوست سمجھتا ہے۔ انہو ں نے ڈپٹی اسپیکر کو یمن کے مو جو دہ حا لات سے آگا ہ کیااور یمن میں سنگین انسانی خلاف ورزیوں کی صورتحال کے متعلق تبادلہ خیا ل کیا۔یمنی سفیر نے افغانستان میں امن معاہدے میں پاکستان کے کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ پاکستان کی خطےمیں امن کی کاوشوں کو دنیا قدر کی نگا ہ سے دیکھتی ہےاور افغان امن معاہدے سے خطے میں  ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہو گا۔ انہوں نے کہا یمن پاکستان کے ساتھ پارلیمانی روابط کو فروغ دینے کا خواہاں ہے اور اس سلسلے میں پارلیمانی دوستی گروپس کو مزید فعال بنایا جائے گا۔ انہوں نے مسئلہ کشمیر کے پرامن حل کی حمایت کی اور اقوام متحدہ اور عالمی فورمز پر یمن کی حمایت کا یقین دلایا۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی افواج کی طرف سے مظلوم کشمیری عوام اور بھارت میں اقلیتوں خصوصاََ مسلمانوں کے ساتھ برتا جانا والا سلوک قابل مذمت ہے ۔